37

اجنبی پر زندگی نچھاور کرنیوالے 85 سالہ کورونا مثبت شخص کی کہانی

عام طور پر تصور کیا جاتا ہے کہ دنیا مفاد پرستوں سے بھری پڑی ہے لیکن آج بھی ایسے لوگ اس دنیا میں موجود ہیں جو اپنی جان کی پرواہ کیے بغیر اپنا حق کسی اور کی جھولی میں ڈال دیتے ہیں اور اس دنیا سے جاتے جاتے دوسروں کے لیے مثال قائم کر جاتے ہیں۔ایک ایسی ہی کہانی بھارتی ریاست مہاشتڑا کے ضلع ناگپور سے تعلق رکھنے والے 85 سالہ نرائن دھبادکر کی ہے جنھوں نے اپنی زندگی دوسروں کے لیے نچھاور کر دی۔کچھ روز قبل کورونا مثبت کا تجربہ کرنے والے نرائن دھبادکر کی صاحبزادی والد میں آکسیجن کی سطح کم ہونے پر ان کے اسپتال میں داخلے کے لیے پریشان تھی تاہم ایک روز نرائن کی صاحبزادی کو بھارت کے اندرا گاندھی اسپتال میں بیڈ مل گیا۔
لیکن جب نرائن اپنے پوتے کے ہمراہ اسپتال پہنچے اور داخلے کے اندراج کے لیے کوائف مکمل کروا رہے تھے تو عین اسی وقت نرائن نے ایک عورت کے رونے کی آواز سنی، خاتون اپنے 40 سالہ شوہر کے اسپتال میں داخلے کے لیے بیڈ کی بھیک مانگ رہی تھی لیکن کورونا کیسز میں اضافے کے سبب یہ ناممکن تھا، خاتون کے بچے بھی رو رہے تھے۔دھبادکر نے عورت کی پریشانی سمجھتے ہوئے میڈیکل ٹیم کو اپنا بیڈ اس عورت کے شوہر کو دینے کی پیشکش کر دی، دھبادکر نے اسپتال انتظامیہ سے کہا میری عمر 85 سال ہے، میں اپنی زندگی گزار چکا ہوں لہٰذا یہ بیڈ اس عورت کے شوہر کو دے دیا جائے۔بعد ازاں نرائن نے اپنے پوتےکو کہا کہ بیٹی کو بھی اس فیصلے سے آگاہ کیا جائے جس کے بعد نرائن گھر لوٹ آئے اور 3 دن بعد انتقال کرگئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں