108

ٹائیفائیڈ ویکسین کی قیمت مقرر نا کرنے پر سندھ ہائیکورٹ ڈریپ پر برہم

ٹائیفائید ویکسین کی قیمت مقرر کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران جسٹس محمد علی مظہر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے استفسار کیا کہ ڈریپ والے کچھ کرنا بھی چاہتے ہیں یا نہیں؟ ڈریپ والے اپنا کام تو کریں، ڈریپ کا سی ای او ایکٹنگ چارج لے کر بیٹھا ہے۔عدالت نے پوچھا کہ ٹائیفائیڈ ویکسین کی قیمت کیوں مقرر نہیں کر رہے؟ آخر مسلہ کیا ہے؟ لوگ ٹائیفائیڈ سے متاثر ہو رہے ہیں ان کو فکر ہی نہیں ہے۔
ستار پیرزادہ ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ ٹائیفائیڈ ویکسین موجود ہے، ڈریپ قیمت مقرر ہی نہیں کر رہی۔دوسری جانب فارماسیوٹیکل کمپنی کے وکیل کا کہنا تھا کہ حکومت کی مقرر کردہ قیمت پر ویکسین فروخت کرنے کو تیار ہیں۔سندھ ہائیکورٹ نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کو ٹائیفائیڈ ویکسین کی قیمت مقرر کرکے 4 مئی تک رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کر دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں